سوات


وہ جو دربدر ہوۓ
خاک بسر ہوۓ
وہ جو لٹ گئےبے گھر ہوۓ
وہ نہ مانگیں تم سے تمہارا گھر
نہ تمہارا سکھ نہ تمہارا در
وہ تو چاہتے ہیں گزر بسر

انہی وادیوں میں عمر بھر

یہ کَڑَا وقت

یہ تلخیاں

یہ گردشیں

یہ بجلیاں

ہے ہمارے رب کا یہ امتحان

چلو قافلوں کو کرو رواں

آؤ مل کر ان کا ساتھ دو

جو مدد کرے وہ ہاتھ دو

کہ یہ اپنی دھرتی کےلوگ ہیں

انہیں زندگی کی سوغات دو

انہیں پھر وہی سوات دو

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s